Breaking News

مستقبل قریب میں بڑے پیمانے پر زلزلے اور سونامی کے خطرات‘ بڑی تباہی کا اندیشہ


مستقبل قریب میں بڑے پیمانے پر زلزلے اور سونامی کے خطرات‘ بڑی تباہی کا اندیشہ
اسلام آباد (ہفتہ : 04 نومبر 2017 ء ) زلزلے سے متاثرہ علاقوں کی تعمیر نو اور بحالی کے کام کرنے والے ادارے ایرا نے ایک مراسلہ میں کہا ہے کہ انہیں آئی ایس آئی کی طرف سے اطلاع دی گئی ہے کہ مستقبل قریب میں بحیرہ عرب میں ایک بڑا
زلزلہ آ سکتا ہے اور اس زلزلے سے پاکستان سمیت کئی ساحلی علاقے متاثر ہونے کا خطرہ ہے اور سرکاری اداروں کو اس کے نقصانات سے بچنے کے لیے فوری تیاری کرنی چاہیے۔ ایرا نے ہنگامی اجلاس طلب کر لیاہے، اس اجلاس کے لیے جاریکیے گئے مراسلے میں ایرا کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ آئی ایس آئی نے بحیرہ عرب میں بڑے پیمانے پر زلزلے اور سونامی کی اطلاع دی ہے اور اس سلسلے میں ایرا نے ممکنہ اقدامات کے لیے اپنا ہنگامی اجلاس چھ نومبر کو طلب کر لیا ہے۔ بلائے گئے اس ہنگامی اجلاس میں زلزلے اور سونامی کے ممکنہ خطرات سے نمٹنے کے لیے فوری اقدامات کے بارے میں فیصلہ کیا جائے گا اس کے علاوہ اس اجلاس میں متعلقہ اداروں اور محکموں کو ذمہ داریاں دینے کا فیصلہ بھی کیا جائے گا۔دوسری جانب ایک بھارتی شہری نے نریندر مودی کو بذریعہ خط سونامی کے ممکنہ خطرات سے خبردار کیاہے، تفصیلات کے مطابق بھارت کے شہری بابو کالیال کا وزیراعظم نریندر مودی کے نام خط سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیا ہے جس میں انہوں نے سونامی کے ممکنہ خطرات سے خبردار کیا اور پاکستان اور بھارت سمیت 11 ایشیائی ممالک میں سونامی کی پیش گوئی کرتے ہوئے خبردار کیا کہ یہ ممالک جلد از جلداس طوفان کے ممکنہ خطرات سے نمٹنے کے لیے فوری اقدامات کریں۔ بھارتی شہری بابو کالیال نے اپنے خط میں کہا کہ 31 دسمبر 2017ء سے قبل بحرہند میں خطرناک زلزلہ آئے گا جس کی وجہ سے ایشیائی ممالک کے ساحلوں پر سونامی کے خطرات ہیں۔ بھارتی شہری نے اپنے خط میں کہا کہ یہ سونامی اس قدر خطرناک ہوگا کہ اکثر ممالک کے ساحلوں کا حلیہ ہی تبدیل ہو جائے گا نہ صرف حلیہ تبدیل ہو گا بلکہ ان کا رقبہ بھی پھیل جائے گا۔ سونامی سے ایشیا کے 11ممالک متاثر ہوں گے۔ ان ممالک میں پاکستان، چین، بھارت، جاپان، نیپال، بنگلہ دیش، تھائی لینڈ، انڈونیشیا،افغانستان اور سری لنکا شامل ہیں جبکہ یہ خلیجی ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔ بابو کالیال نے خط میں مزید لکھا کہ اس موقع پر شیشما طوفان آئے گا جو کہ 120کلومیٹر سے 180 کلومیٹر تک پھیل جائے گا اور شدید سونامی کا خطر ہ ہے۔ واضح رہے کہ بابو کالیال نامی شخص بی کے ریسرچ ایسوسی ایشن فار ای ایس پی کا ڈائریکٹر ہے، اس نے اپنے خط میں بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی سے کہا کہ اس نے20 اگست کو اس بات کا مشاہدہ کیا تھا اور ممکنہ خطرات سے نمٹنے کے لیے حکومت کو بذریعہ خط آگاہ کر رہا ہوں۔